میں تو پنجتن کا غلام ہوں

میں تو پنجتن کا غلام ہوں میں تو پنجتن کا غلام ہوں میں مرید خیر الانعام ہوں میں فقیر خیر الانعام ہوں میں غلام…… ابن غلام ہوں میں تو پنجتن کا غلام ہوں میں تو پنجتن کا غلام ہوں کیا بات رضا اس چمنستان کرم کی زہرا ہے کلی جس کی حسن اور حسین پھول مجھ پہ کتنا نیازی کرم ہو گیا دنیا کہنے لگی پنجتن کا گدا اس گھرانے کا میں جب سے نوکر ہوا سب سے اچھی میری نوکری ہو گئی مجھے عشق ہے تو خدا سے ہے مجھے عشق ہے تو رسول سے میرے منہ سے آئے … Continue reading میں تو پنجتن کا غلام ہوں

آیا نہ ہو گا اس طرح حُسن و شباب ریت پر‎

آیا نہ ہو گا اس طرح حُسن و شباب ریت پر کہ گلشنِ فاطمہؑ کے تھے سارے گلاب ریت پر آلِ نبیؐ کے سوا کوئی نہیں کِھلا سکا قطرہِ آب کے بغیراتنے گلاب ریت پر ترسے حسینؑ آب کو، میں جو کہوں تو بے ادب لمسِ لبِ حسینؑ کو ترسا ہے آب ریت پر عشق میں کیا بچائیے، عشق میں کیا لٹائیے آلِ نبیؐ نے لکھ دیا سارا نصاب ریت پر جتنے سوال عشق نے آلِ رسولؐ سے کیے ایک سے بڑھ کر اک دیا سب نے جواب ریت پر آلِ نبیؐ کا کام تھا، آلِ نبیؐ ہی کر گئے … Continue reading آیا نہ ہو گا اس طرح حُسن و شباب ریت پر‎

یہ بلیقین حسین ؑ ہے۔ حفیظ جالندھری

شاه است حسین پادشاه است حسین دین است حسین دین پناه است حسین سر داد نداد دست در دست یزید حقا ک ه بنائے لا الہ است حسین معین الدین چشتی اجمیری لباس ہے پھٹا ہوا، غبار میں اٹا ہوا تمام جسمِ نازنیں چھدا ہوا کٹا ہوا یہ کون ذی وقار ہے، بلا کا شہسوار ہے کہ ہے ہزار قاتلوں کے سامنے ڈٹا ہوا یہ بلیقین حسین ؑہے، نبیؐ کا نورِعین ہے یہ کون حق پرست ہے، مئے رضائے مست ہے کہ جس کے سامنے کوئی بلند ہے نہ پست ہے اُدھر ہزار گھات ہے، مگر عجیب بات ہے کہ … Continue reading یہ بلیقین حسین ؑ ہے۔ حفیظ جالندھری

شہسوارِ کربلا کی شہسواری کو سلام

رسمِ عشاق ہے کہ وفا کرتے ہیں یعنی ہرحال میں حق اپنا ادا کرتے ہیں حوصلہ حضرت شبیر کا اللہ اللہ سر جدا ہوتا ہے اور شکرِ خدا کرتے ہیں اک طرف دنیا کی سب راحت تھی اور آرام تھا اک طرف سر دے کہ دینِ حق بچانا کام تھا راہ پہ دنیاِ ملی قربانِ حق سر کر دیا یا حسین ابن علی یہ آپ ہی کا کام تھا شہسوارِ کربلا کی شہسواری کو سلام نیزے پہ قرآن پڑھنے والے قاری کو سلام رات دن بچھڑے ہواوں کی رہ میں رہنا کھڑے حضرت صغرا تمہاری انتظاری کو سلام کانپ اٹھا … Continue reading شہسوارِ کربلا کی شہسواری کو سلام

دم ہمہ دم علی علی

مستِ ولاہِ حیدرم، دم ہمہ دم علی علی ھر دو جہان زہ دل بھرم، دم ہمہ دم علی علی شاہِ شریعتم علی، پیرِ طریقتم علی حق بہ علی حقیقتم، دم ہمہ دم علی علی نقطہء پائے بسم اللہ، سِرّے سرااِلٰی اِلٰہ اوّلِ نقش والقلم، دم ہمہ دم علی علی شعلہء طُورِ کُل کفا، شمعِ فروزِ اِنّما نورِ نمائی ظلمتم، دم ہمہ دم علی علی ناراضِ ھائے ھُو کُنم، سُوئے نجف رواں شِوم بوسہ بہ آستاں ظنم، دم ہمہ دم علی علی ————————————————– Mast-e-wila-e-haydaram Dam hama dam Ali Ali Har do jahan zay dil bharam Dam hama dam Ali Ali Shah-e-sharee’atam … Continue reading دم ہمہ دم علی علی