یہ بلیقین حسین ؑ ہے۔ حفیظ جالندھری

شاه است حسین پادشاه است حسین دین است حسین دین پناه است حسین سر داد نداد دست در دست یزید حقا ک ه بنائے لا الہ است حسین معین الدین چشتی اجمیری لباس ہے پھٹا ہوا، غبار میں اٹا ہوا تمام جسمِ نازنیں چھدا ہوا کٹا ہوا یہ کون ذی وقار ہے، بلا کا شہسوار ہے کہ ہے ہزار قاتلوں کے سامنے ڈٹا ہوا یہ بلیقین حسین ؑہے، نبیؐ کا نورِعین ہے یہ کون حق پرست ہے، مئے رضائے مست ہے کہ جس کے سامنے کوئی بلند ہے نہ پست ہے اُدھر ہزار گھات ہے، مگر عجیب بات ہے کہ … Continue reading یہ بلیقین حسین ؑ ہے۔ حفیظ جالندھری

دم ہمہ دم علی علی

مستِ ولاہِ حیدرم، دم ہمہ دم علی علی ھر دو جہان زہ دل بھرم، دم ہمہ دم علی علی شاہِ شریعتم علی، پیرِ طریقتم علی حق بہ علی حقیقتم، دم ہمہ دم علی علی نقطہء پائے بسم اللہ، سِرّے سرااِلٰی اِلٰہ اوّلِ نقش والقلم، دم ہمہ دم علی علی شعلہء طُورِ کُل کفا، شمعِ فروزِ اِنّما نورِ نمائی ظلمتم، دم ہمہ دم علی علی ناراضِ ھائے ھُو کُنم، سُوئے نجف رواں شِوم بوسہ بہ آستاں ظنم، دم ہمہ دم علی علی ————————————————– Mast-e-wila-e-haydaram Dam hama dam Ali Ali Har do jahan zay dil bharam Dam hama dam Ali Ali Shah-e-sharee’atam … Continue reading دم ہمہ دم علی علی

The Secret of the tragedy of Karbala – Allama Iqbal

Allama Iqbal on Imam Husain [AS] قافلہء حجاز ميں ايک حسين بھي نہيں گرچہ ہے تاب دار ابھي گيسوئے دجلہ و فرات عقل و دل و نگاہ کا مرشد اوليں ہے عشق عشق نہ ہو تو شرع و ديں بت کدئہ تصورات صدق خليل بھي ہے عشق ، صبر حسين بھي ہے عشق معرکہء وجود ميں بدر و حنين بھي ہے عشق Allama Iqbal’s Persian poem on the incident of Karbala [with translation]. در معنی حریت اسلامیہ و سر حادثۂ کربلا ماسوا اللہ را مسلمان بندہ نیست پیش فرعونے سرش افگندہ نیست مسلمان اللہ کے سوا کسی قوت کا غلام … Continue reading The Secret of the tragedy of Karbala – Allama Iqbal