السّلام اے نُورِ اوّل کے نشاں – از واصف علی واصف

السّلام اے نُورِ اوّل کے نشاں السّلام اے راز دارِ کُن فکاں السّلام اے داستانِ بے کسی السّلام اے چارہ سازِ بےکساں السّلام اے دستِ حق ، باطل شِکن السّلام اے تاجدارِ ہر زماں السّلام اے رہبرِ علمِ لدُن السّلام … Continue reading السّلام اے نُورِ اوّل کے نشاں – از واصف علی واصف

الوداع پیارے مدینہ الوداع

الوداع پیارے مدینہ الوداع 26 رجب نماز عشاء کے بعد دار الامارہ مدینہ میں امام کے ساتھ پیش آنے والی صورت حال کے مد نظر 27 رجب نماز فجر کے بعد امام نے تمام خاندان کے افراد کو اکٹھا کیا اور فرمایا کہ مدینہ اب ہمارے رہنے کے لئے محفوظ نہیں رہ گیا اس لئے اب اس بارے میں تمہاری کیا رائے ہے تجاویز کے بعد طے پایا کہ مکّہ جانا چاہیے لہٰذا امام نے حکم صادر فرمایا کہ تیاری شروع کی جائے- 27 رجب کا تمام دن سفر کی تیاریوں میں گزرا – 200 اونٹھوں کا انتظام کیا گیا … Continue reading الوداع پیارے مدینہ الوداع

آیا نہ ہو گا اس طرح حُسن و شباب ریت پر‎

آیا نہ ہو گا اس طرح حُسن و شباب ریت پر کہ گلشنِ فاطمہؑ کے تھے سارے گلاب ریت پر آلِ نبیؐ کے سوا کوئی نہیں کِھلا سکا قطرہِ آب کے بغیراتنے گلاب ریت پر ترسے حسینؑ آب کو، میں جو کہوں تو بے ادب لمسِ لبِ حسینؑ کو ترسا ہے آب ریت پر عشق میں کیا بچائیے، عشق میں کیا لٹائیے آلِ نبیؐ نے لکھ دیا سارا نصاب ریت پر جتنے سوال عشق نے آلِ رسولؐ سے کیے ایک سے بڑھ کر اک دیا سب نے جواب ریت پر آلِ نبیؐ کا کام تھا، آلِ نبیؐ ہی کر گئے … Continue reading آیا نہ ہو گا اس طرح حُسن و شباب ریت پر‎

The heinous crimes of Yazid [LA] beside Karbala

The tragedy of Karbala alone is enough to damn Yazeed to hell, but for his supporters, here are other references from history as well. Imam Ibn Kathir (rah) says in his magnificent work of Tarikh under events of 63 AH Ibn Zubayr (Radhi Allaho Anho) said: O PEOPLE YOUR COMPANIONS HAVE BEEN KILLED – Inna Lillahi Wa Inna Ilaihi Rajiun “Yazeed committed a mistake and that too a disgusting one by ordering Muslim bin Uqba to make Madina “mubah” for three days. This was his biggest and ugliest blunder. Many Sahaba and their children were slaughtered. As it has been … Continue reading The heinous crimes of Yazid [LA] beside Karbala

یہ بلیقین حسین ؑ ہے۔ حفیظ جالندھری

شاه است حسین پادشاه است حسین دین است حسین دین پناه است حسین سر داد نداد دست در دست یزید حقا ک ه بنائے لا الہ است حسین معین الدین چشتی اجمیری لباس ہے پھٹا ہوا، غبار میں اٹا ہوا تمام جسمِ نازنیں چھدا ہوا کٹا ہوا یہ کون ذی وقار ہے، بلا کا شہسوار ہے کہ ہے ہزار قاتلوں کے سامنے ڈٹا ہوا یہ بلیقین حسین ؑہے، نبیؐ کا نورِعین ہے یہ کون حق پرست ہے، مئے رضائے مست ہے کہ جس کے سامنے کوئی بلند ہے نہ پست ہے اُدھر ہزار گھات ہے، مگر عجیب بات ہے کہ … Continue reading یہ بلیقین حسین ؑ ہے۔ حفیظ جالندھری

شہسوارِ کربلا کی شہسواری کو سلام

رسمِ عشاق ہے کہ وفا کرتے ہیں یعنی ہرحال میں حق اپنا ادا کرتے ہیں حوصلہ حضرت شبیر کا اللہ اللہ سر جدا ہوتا ہے اور شکرِ خدا کرتے ہیں اک طرف دنیا کی سب راحت تھی اور آرام تھا … Continue reading شہسوارِ کربلا کی شہسواری کو سلام